بے ریاستی یا بے وطنی

پناہ گزینوں سے متعلق اپنے مینڈیٹ کے علاوہ، UNHCR وہ ایجنسی بھی ہے جسے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے بے وطنی سے نمٹنے کے لیے ذمہ داری دی ہے۔

بے وطن یا بے ریاستی شخص وہ ہوتا ہے جسے کسی بھی ملک یا وطن نے اپنے قانون کے تحت شہریت نہیں دی ہوتی یعنی اس شخص کے پاس کسی بھی ملک یا وطن کی شہریت نہیں ہوتی یو این ایچ سی ار کے اندازے کے مطابق تقریبا 10 ملین لوگ دنیا میں ایسے ہیں جو بے وطن ہیں بے وطن ہونے کی بہت سے وجوہات ہو سکتی ہیں مثال کے طور پہ کسی خاص نسل یا خاص مذہبی گروہ کے خلاف امتیازی رویہ رکھا جائے یا پھر کسی خاص جینڈر یعنی مرد یا عورت کے خلاف امتیازی رویہ یا جب نئی ریاستیں پیدا ہوتی ہیں یا پھر موجودہ ریاستوں کے درمیان میں علاقوں کی رد و بدل ہوتی ہے یا شہریت سے متعلق جو قوانین ہوتے ہیں ان میں کوئی جھگڑا ہوتا ہے. ان وجوہات کی وجہ سے ایک شخص بے وطن ہو سکتا ہے

وجہ چاہے کوئی بھی ہو دنیا کے ہر ملک اور خطے میں وہ لوگ جو بے وطن ہوتے ہیں ان کے لیے سنگین نتائج ہوتے ہیں ایسے بے وطن افراد کو شناختی ڈاکومنٹ روزگار تعلیم اور صحت جیسی خدمات تک بہت محدود رسائی ہوتی ہے بے وطنی کی وجہ سے لوگ مجبورا ہجرت کرتے ہیں اور اسی طرح مجبورا ہجرت کرنے کی وجہ سے بھی لوگ بے وطن ہو جاتے ہیں

یہ وطن ہی ہوتے ہیں جو شہریت دینے سے متعلق قوانین بناتے ہیں لہذا یو این ایچ سی ار مختلف حکومتیں خواں میں متحدہ کی ایجنسیز اور سول سوسائٹی کے ساتھ مل کر کام کر کے اس بے وطنی کے مسئلے کو دیکھتا ہے

بے وطنی کے خاتمے پر کام کرنے والی تنظیمیں

دیہی علاقوں کے لیے انسانی وسائل کی ترقی (DHRRA) ملائیشیا یہ ایک تنظیم ہے جو رضاکارانہ, غیر سیاسی اور غیر منافہ بخش ہے. 2009 سے بے وطن افراد کی مدد کے لیے کام کر رہی ہے DHRRA تنظیم ان بے وطن افراد کو معلومات اور قانونی مدد فلاں ہم کرتی ہے جو شہریت حاصل کرنا چاہتے ہیں یا وہ ڈاکومنٹ حاصل کرنا چاہتے ہیں جس سے اپنی شہریت کا ثبوت دے سکیں

دیہی علاقوں کے لیے انسانی وسائل کی ترقی (DHRRA)

پتہ: 301 اور 302 بلاک ای کیلانہ پارک ویو، نمبر 1، ایس ایس 6/2، کیلانہ جایا 47300 پیٹلنگ جایا، سیلنگور، ملائیشیا